کیوی پارلیمنٹ کا امن کی راہ میں بڑا فیصلہ

نیوزی لینڈ کی پارلیمنٹ میں جب نیم خودکار ہتھیاروں پر پابندی کا بل پیش کیا گیا،،، تو اس بل کو جہاں ’آزاد خیال‘ تصور کیے جانے والے اراکین پارلیمنٹ کی حمایت حاصل ہوئی تو وہیں قدامت پسند سمجھے جانے والوں نے بھی بل کی تائیدبھی کی ۔ مجموعی طور پر 119 اراکین پارلیمنٹ نے بل کی حمایت میں ووٹ دیا جب کہ صرف ایک رکن نے اس کی مخالفت کی۔
بل کی مخالفت کرنے والے قانون ساز کا کہنا تھا کہ خود کار ہتھیاروں سے متعلق بل جلد بازی میں پیش کیا جارہا ہے۔نیم خود کار ہتھیاروں پر پابندی کے لیے بل ووٹنگ کا یہ پہلا مرحلہ تھا، دیگر دو مراحل میں کامیابی کے بعد ہی بل کو قانونی درجہ حاصل ہوجائےگا۔بل پر قانون سازی کے بعد فوجی طرز کے نیم خود کار ہتھیاروں پر پابندی عائد ہوگی
نیوزی لینڈ کے شہر کرائسٹ چرچ میں 15 مارچ کو دو مساجد پر دہشت گرد نے اس وقت داخل ہوکر فائرنگ کی تھی جب بڑی تعداد میں نمازی، نماز جمعہ کی ادائیگی کے لیے مسجد میں موجود تھے۔افسوسناک واقعے میں 50 افراد شہید جبکہ متعدد زخمی ہوگئے تھے، نیوزی لینڈ کی وزیراعظم جسیںڈا آرڈرن نے حملوں کو دہشت گردی قرار دیا تھا۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.