کیوی پارلیمنٹ میں اسلحہ قوانین میں ترمیم منظور

پارلیمان نیوزی لینڈ نے بھاری اور خودکار اسلحے پر پابندی سے متعلق وزیراعظم جیسنڈا آررڈن کی تجویز کردہ ترامیم کو کثرت رائے سے منظور کرلیا۔ اسلحے کے قانون میں ترمیمی بل کی حمایت میں 119 اور مخالفت میں محض ایک ووٹ ڈالا گیا۔گورنر سے منظوری کے بعد ترمیم کو چند روز میں قانونی شکل دے دی جائے گی۔ قانون کی خلاف ورزی کرنے والوں کو 2 سے 10 سال تک قید کی سزا ہوسکتی ہے۔ تاہم ستمبر تک خودکار اسلحہ واپس کرنے والے شہری کا نقصان حکومت پورا کرے گی اپنے خطاب میں جیسنڈا آرڈرن کا کہنا تھا کہ سانحہ کے 26 روز بعد بھی پوری پارلیمنٹ متحد ہے اور اتحاد کا یہ مظاہرہ بہت کم دیکھنے کو ملتا ہے۔ نیوزی لینڈ کی وزیراعظم نے کرائسٹ چرچ میں 2 مساجد پر حملے کو بدترین دہشتگردی قرار دیتے ہوئے ملک میں اسلحہ قوانین تبدیل کرنے کا اعلان کیا تھا۔دہشتگردی کی اس سانحہ میں 9 پاکستانیوں سمیت 50 مسلمانوں نے جام شہادت نوش کیا تھا
Back

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.