کوئی امید بر نہیں آتی۔۔ کوئی صورت نظر نہیں آتی

کوئی امید بر نہیں آتی۔۔ کوئی صورت نظر نہیں آتی۔۔۔پی ٹی آئی سرکار کی تسلیاں کسی کام نہ آئیں،معیشت میں بہتری کے تمام دعوے دھرے کے دھرے رہ گئے،اس حوالے سے عالمی بینک اور آئی ایم ایف بھی خطرے کی گھنٹی بجا چکا ہے،ایسے میں اسدعمر کے پیش گوئیاں بھی کارگر ثابت نہ ہوئیں،کاروباری حضرات کسی طور پر بھی اعتماد کرنے کو تیار نہیں،یہی وجہ ہے کہ سٹاک مارکیٹ 3 سال کی نچلی سطح پر پہنچ چکی ہے،پاکستانی تاجر پریشان حال ہیںعمران خان نے جب سے وزارت عظمیٰ کا منصب سنبھالا تب 100 انڈیکس 42000 کی بلند سطح پر تھا لیکن دیکھتے ہی دیکھتے یہ انڈیکس اب 36000 پر آن رکا ہے،جس میں بہتری کی کوئی امید نظر نہیں آ رہی،اسدعمر یقین دلارہے ہیں،لیکن تاجر مان نہیں رہے،گزشتہ دنوں بھی وزیر خزانہ نے تاجروں سے ویڈیو لنک خطاب میں ڈالر کی بجائے پاکستانی سٹاک مارکیٹ میں تجارت کرنے کی درخواست کی تھیمعاشی غیر یقینی اور عالمی مالیاتی ادرے ورلڈ بینک کی پاکستان کی معیشت پر رپورٹ کے بعد بیرونی اور مقامی سرمایا کار پاکستان سٹاک ایکسچینج میں سرمایا لگانے کے بجائے حصص کی فروخت میں زیادہ دلچسپی لے رہے ہیں۔کاروباری ہفتے کے تیسرے روز پاکستان سٹاک ایکسچینج میں 550 پوائنٹس کی کمی ریکارڈ کی گئی۔ 100 انڈیکس 6 ماہ کی کم ترین سطح 36 ہزار 579 پوائنٹس کی سطح پر بند ہوا

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.