لیبیا میں اقتدار پر قبضے کی جنگ شدت اختیار کر گئی

لیبیا کے مشرق میں موجود فوجی قوتوں کے لیڈر جنرل حفتر نے دارالحکومت طرابلس پر قبضے کے لئے 4 اپریل کو حملے کا حکم دیا جس کے جواب میں دارالحکومت میں متعین قومی مفاہمتی حکومت کی یونٹوں نے بھی جوابی آپریشن کا آغاز کر دیا تھاڈبلیو ایچ او کے ٹویٹر پیج سے جاری کردہ اعداد و شمار کے مطابق زخمیوں کی تعداد ساڑھے پانچ سو سے زائد ہے۔ ڈبلیو ایچ او نے طرابلس کے لیے ادویات بھیجنے کا اعلان کرتے ہوئے واضح کیا ہے کہ وہاں پر طبی امدادی عملے کی تعداد بھی بڑھائی جا رہی ہے۔تیل کی دولت سے مالا مال ملک میں بڑھتی ہوئے پرتشدد واقعات پر عالمی قوتوں نے تشویش کا اظہار کیا جہاں 2011 میں نیٹو کی حمایت یافتہ افواج کی جانب سے سابق آمر معمر قذافی کو ہٹائے جانے کے بعد سے ملک مستقل مشکلات کا شکار ہے

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.