ذوالفقارعلی بھٹوایک تاریخ سازشخصیت

پاکستان کے عظیم لیڈرذوالفقار علی بھٹو 5جنوری 1928 کو لاڑکانہ میں پیدا ہوئے ،انہوں نے آکسفورڈ اور کیمبرج سےتعلیم حاصل کی ،انہوں نےبین الاقوامی قانون میں اعلیٰ ڈگری لی ، وہ کراچی یونیورسٹی میں بین الاقوامی قانون بھی پڑھاتے رہے،،، ذوالفقار علی بھٹوایوب خان کی کابینہ میں وزیر خاجہ کے عہدے پر فائض رہے،،،،معاہدہ تاشقند کے بعد ذوالفقارعلی بھٹوکےجنرل ایوب خان سے اختلافات پیدا ہوئے توان سے علیٰحدگی اختیارکرتے ہوئے ایک نئی سیاسی پارٹی کی بنیاد رکھی،،،، جس کا نام رکھا گیا”پاکستان پیپلزپارٹی”،،،،، اس پارٹی کا منشور بہت ترقی پسندانہ تھا جو ملک کے “غریب” “مزدور” ہاری” اور کچلے ہوئے طبقات کےلئے بڑی کشش رکھتا تھا،،،،پاکستان پیپلزپارٹی کے بانی کا تعلق یوں تو جاگیردار گھرانے سے تھا،،،لیکن اس کے باوجود سیاست کو جاگیرداروں کے محلوں سے نکلااورعوامی اندازاپنایا،،،،بھٹوروایتی شلوار قمیض اور سر پر ٹوپی پہنتےتھے،،،،بھٹوجب عوام کے جم غفیر سے خطاب کرتے تو سب پر سحر طاری ہو جاتا۔امت مسلمہ کے اتحاد کی کوششیں،متفقہ آئین کی فراہمی،ایٹمی پروگرام اور پاک چین دوستی کا آغازذوالفقار علی بھٹو کے وہ کارنامے ہیں جنہیں کبھی بھلایا نہیں جا سکتا۔ ذوالفقار علی بھٹو کو 4 اپریل 1979ء کو راولپنڈی کی اڈیالہ جیل میں پھانسی دی گئی تھی، ذوالفقار علی بھٹو پر نواب محمد احمد خان قصوری کے قتل میں مدد کا الزام تھا، جسے سیاسی قتل قرار دیا گیا۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.