جہانگیر ترین بیک گراونڈ میں رہ کر پارٹی کو تجویز دیںے کا مشورہ

ایک بار پھر پی ٹی آئی میں گروپ بندی،،،شاہ محمود قریشی جہانگیر ترین کی مخالفت میں کھل کر سامنے آ گئے لاہور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے شاہ محمود قریشی کے جہانگیر ترین پر تابڑ توڑ لفظی وار ،،،کہا ترین صاحب کو سرکاری اجلاسوں میں نہیں بیٹھنا چاہئے،،،اپوزیشن کو بولنے کا موقع ملتا ہے۔جہانگیر ترین بھی کہاں کسی سے پیچھے رہنے والے تھے ،،وزیر اپنے ٹوئٹر بیان کے ذریعے اس کا جواب دیے ڈالا۔انہوں نے شاہ محمود قریشی کا نام لیے بغیر کہا کہ جہاں بھی جاتا ہوں عمران خان کی مرضی اور خواہش سے جاتا ہوں، مجھے پاکستان کی خدمت سے کوئی نہیں روک سکتا۔جہانگیر ترین نے مزید کہا کہ صرف ایک ہی شخص ہے جسے اپنا لیڈر تصور کرتا ہوں اور اُسی کو جوابدہ ہوں، اس کا نام عمران خان ہے۔دوسری جانب فیصل واوڈا بھی جہانگیر ترین کی حمایت میں بول پڑے،کہا جہانگیر ترین وفاقی کابینہ کے اجلاس میں ممبران کی خواہش پر شرکت کرتے ہیں،ہم ان کی سینئر ہونے کے ناطے عزت کرتے ہیں،کوئی ہمیں ڈکٹیٹ نہیں کرسکتا،ہمارا لیڈر عمران خان ہے اور ہم صرف اسی کا حکم مانتے ہیںیاد رہے کہ انتخابات 2018 کے لیے ٹکٹوں کی تقسیم اور انتخابات میں کامیابی کے بعد وزارتوں کی تقسیم کے معاملے پر بھی تحریک انصاف کے دونوں رہنما کھل کر آمنے سامنے آئے تھے۔ایک موقع پر چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے بھی تسلیم کیا تھا کہ پارٹی میں جہانگیر ترین اور شاہ محمود قریشی دو گروپ بن چکے ہیں جس سے پارٹی کو نقصان پہنچ رہا ہے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.