بھارت کا مکروہ چہرہ ایک بار پھر بےنقاب

انسانی حقوق کےنام نہاد علمبردار بھارت نے انسانی حقوق کی دھجیاں اڑادیں،، بھارت کی تہاڑ جیل میں سپرنٹنڈنٹ نے مسلمان قیدی کو زبردستی ہندو بنانے کیلئےاسے بدترین تشدد کا نشانہ بناڈالا،مارپیٹ سےکوئی بات نہ بنی تو نوجوان کی پشت پر لفظ اوم داغ دیا،مسلم قیدی کو 2 روز تک کھانا بھی نہیں دیا گیا۔وحشیانہ تشددکی اطلاع پرشبیر نامی قیدی کے اہلخانہ نے مقامی عدالت سے رجوع کرلیا، قیدی کےلواحقین نےعدالت کےروبروموقف اپنایاکہ ان کے بیٹے کی جان کو خطرہ ہے۔ عدالت کے حکم پر 34 سالہ شبیر کو عدالت پیش کیا گیا جہاں اس نے اپنی پشت پر داغا گیالفظ اوم بھی دکھایا ۔عدالت نے جیل حکام کو مسلمان قیدی کی حفاظت یقینی بنانے اور واقعہ کی رپورٹ پیش کرنے کا حکم دے دیا۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.