بلوچستان کی سینیٹ میں خالی نشست پر بلوچستان عوامی پارٹی کے امیدوار کامیاب

بلوچستان اسمبلی میں پشتونخواہ ملی عوامی پارٹی کے سینیٹر سردار اعظم موسیٰ خیل کی وفات کے بعد خالی ہونے والی نشست پربلوچستان عوامی پارٹی کے منظور احمد کاکڑ اور بی این پی مینگل کے غلام نبی مری سمیت 5 امیدواروں کے درمیان مقابلہ ہوا۔65 کے ایوان میں 63 اراکین نے ووٹ کاسٹ کئے، بی اے پی کے امیدوار منظور احمد کاکڑ نے اے این پی، پی ٹی آئی اور ایچ ڈی پی سمیت دیگر اتحادی جماعتوں کی حمایت کے بعد 38 ووٹ لیکر کامیابی حاصل کی، متحدہ اپوزیشن جماعتوں کے متفقہ امیدوار بی این پی مینگل کے امیدوار غلام نبی مری 23 ووٹ حاصل کر کے دوسرے نمبر پر رہے۔مسلم لیگ ن کے نواب ثناء اللہ زہری اور پی ٹی آئی کے سردار یار محمد رند نے ووٹ کاسٹ نہیں کیا جبکہ ایک ووٹ مسترد کر دیا گیا۔نومنتخب سینیٹر منظور احمد کاکڑ نےکامیابی وزیراعلیٰ جام کمال اوراتحادی جماعتوں کاشکریہ اداکیبلوچستان عوامی پارٹی کےامیدوارکی جیت پروزیراعلیٰ جام کمال نےحمایت کرنےپرتحریک انصاف کی قیادت کی تعریف کی سینیٹ کی نشست پرتحریک انصاف نےاگرچہ بلوچستان عوامی پارٹی کی حمایت کرکےاسےجیت سےہمکنارکرادیالیکن وفاق میں اپنے حکومتی اتحاد کوخطرےمیں ڈال دیا، بی این پی مینگل نے حکومت کی جانب سے حمایت نہ ملنے پر الگ ہونے کی دھمکی دی تھی، بی این پی کا کہنا تھا کہ اس نے وزیراعظم، صدر، سپیکر اور ڈپٹی سپیکر کے انتخاب میں حکومت کی حمایت کی،اس لئےاب حکومت سینیٹ کی نشست پر اس کے امیدوار کی حمایت کرےاور اگر حکومت نے بلوچستان عوامی پارٹی کو ووٹ دیا تو وہ اتحاد پر نظرِ ثانی کرے گی۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.