سنگین انسانی حقوق کی خلاف ورزی کا الزام

0
واشنگٹن کی جانب سے پاسداران انقلاب ایران کے صوبائی کمانڈر اور لا انفورسمنٹ فورس کے اعلیٰ عہدیداروں سمیت 7 افراد پر بھی پابندی لگادی۔امریکی حکام نے الزام لگایا کہ متعدد ایرانی کمپنیاں ’توانائی، تعمیرات، ٹیکنالوجی، سروسز اور بینکنگ انڈسٹری میں ملوث ہیں۔
امریکی سیکریٹری خزانہ سٹیون میوچن نے کہا کہ ایرانی حکومت جسمانی اور نفسیاتی زیادتیوں کے ذریعے ایرانی عوام کے پرامن احتجاج پر پرتشدد دباؤ ڈالتی ہے۔انہوں نے کہا کہ امریکا ان تمام عہدیداروں اور ان اداروں کا محاسبہ کرے گا جو اپنے ہی لوگوں پر ظلم اور زیادتی کرتے ہیں۔سٹیون میوچن نے کہا کہ ایران کے قانون نافذ کرنے والے فوجی دستوں نے مظاہرین پر حکومتی کریک ڈاؤن میں اہم کردار ادا کیا اور جسمانی اور نفسیاتی زیادتیوں سے وابستہ حراستی مراکز چلاتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ایل ای ایف نے رواں ماہ افغان شہریوں پر تشدد کیا اور انہیں زبردستی دریا میں دھکیل دیا۔اس سے قبل جنوری میں امریکا نے خطے کو غیر مستحکم کرنے کے الزام میں ایران کے 8 اعلیٰ عہدیداروں کے خلاف پابندیوں کا اعلان کیا تھا۔امریکی محکمہ خزانہ کے سیکریٹری نے وائٹ ہاؤس میں بریفنگ میں صحافیوں کو بتایا تھا 8 اعلیٰ عہدیداروں پر پابندی کے ساتھ ایران میں کان کنی اور دھاتوں کی پیداوار کی ایک درجن سے زائد کمپنیوں پر بھی پابندی عائد کی گئی ہے۔

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: