امریکا اپنے”بغل بچے”کی حمایت میں چالبازی سے باز نہ آیا

0

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے وائٹ ہاؤس میں اسرائیلی وزیرِ اعظم بنجمن نیتن یاہو کے ہمراہ پریس کانفرنس کے دوران منصوبے کی تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ بیت المقدس اسرائیل کا غیرمنقسم دارالحکومت رہے گا جبکہ فلسطینیوں کو مقبوضہ مشرقی یروشلم میں دارالحکومت بھی فراہم کیا جائے گا۔صیہونی وزیراعظم بنجمن نیتن یاہو نے دو ریاستی منصوبے کے اعلان کے بعد صدر ٹرمپ کو وائٹ ہاؤس میں رہنے والے اسرائیل کے سب سے بڑے دوست کا خطاب دیا۔انہوں نے فلسطینیوں سےکہاکہ وہ اسرائیل کو یہودی مملکت کے طور پر تسلیم کریں۔ادھر فلسطینی حکومت نے اس منصوبے کو یکسر مسترد کردیا،،صدر محمود عباس اور وزیرِ اعظم محمد اشتیہ نے اپنے بیان میں کہا کہ امریکی منصوبہ فلسطینی مزاحمت اور مقصد کے خاتمے کا ایک منصوبہ ہے جسے ہم مسترد کرتے ہیں جبکہ حماس نے بھی حکومتی بیان کی تائید کی۔فلسطین میں ترمپ کے منصوبے کے خلاف عوامی سطح پر بھی شدید احتجاج دیکھنے میں آیا اورغزہ کی پٹی میں ہزاروں افراد سڑکوں پرنکل آئے ۔ مظاہرین نے صدر ٹرمپ اور نیتن یاہو کی تصاویر کو آگ لگائی اور بینروں کے ذریعے یہ پیغام پہنچایا کہ ’فلسطین برائے فروخت‘ نہیں ،، دوسری جانب عرب لیگ نے اس مسئلے پر ہفتے کو ہنگامی اجلاس طلب کرلیا ہے۔

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: