افغانستان ۔۔۔۔ سپرپاورزکا قبرستان

امریکی صدر ٹرمپ نے کہاہے کہ طالبان تھک چکے ہیں اور امن چاہتے ہیں اور اگر یہ کہا جائے کہ سب ہی تھک چکے ہیں تو کچھ غلط نہیں ہوگا۔ ایک امریکی ٹی وی چینل سے انٹرویومیں ٹرمپ نے کہا کہ وقت آگیاہے،دیکھیں گے طالبان کے ساتھ کیا ہوتا ہے؟ طالبان امن چاہتے ہیں، وہ تھک چکے ہیں، سب ہی تھک چکے ہیں ، انہوں نے کہا کہ افغانستان میں انٹیلی جنس روابط قائم رکھیں گے ، مسائل نے سر اٹھایا تو پھر دیکھیں گے کیا کرنا ہے ۔
ڈونلڈٹرمپ نے انٹرویو کے دوران جہاں امریکا کو طویل جنگوں سے نکالنے کی خوشخبری دی تو دوسری جانب انہوں نے وینزویلا میں فوجی کارروائیوں کا عندیہ بھی دے دیا ،ان کا کہنا تھا کہ کولس مدورو کو وینزویلا کے عوام نے مسترد کردیا اس لئے انہیں فوری طور پر انتخابات کا اعلان کرنا چاہئے بصورت دیگر فوجی کارروائی کیلئے تیاررہے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ شام سے امریکی فوج کی واپسی ضرور ہوگی لیکن یہ واپسی ایک ٹائم فریم کے تحت ہوگی ۔
واضح رہے کہ تھکنے کابیان دور حاضر کی سپر پاور امریکہ کے صدر کی جانب سے پہلی بار نہیں دیا گیا بلکہ اس سے قبل بھی اپنے وقت کی سپر پاور برطانیہ جس کے اقتدار میں سورج بھی غروب نہ تھا اپنی بھرپور کوششوں کے باوجود افغانستان پر قبضہ نہ کرسکی اور اسی کی دہائی میں عالمی سپر پاور سوویت یونین بھی افغانستان کوفتح کرنے کے جذبے سے حملہ آور ہوئی لیکن اس کا گرم پانیوں تک پہنچنے کا خواب پورا نہ ہوا اور وہ خود بکھر کررہ گئی

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.