وائٹ ہاؤس کو آپ کی خدمات مزید درکارنہیں

امریکا طالبان امن مذاکرات کی یکدم منسوخی کے بعد ٹرمپ کا ایک اور حیران کن اقدام،،،امریکی صدر نے سماجی رابطےکی ویب سائٹ پر اپنے ٹویٹ میں بتایا کہ میں نے گزشتہ رات جان بولٹن سے کہا تھا کہ ان کی خدمات وائٹ ہاؤس کو مزید درکار نہیں ہیں لہٰذا وہ عہدے سے مستعفی ہوجائیں جس پر جان بولٹن نےصبح مجھے استعفیٰ دے دیا ہے
امریکی صدر کی جانب سے جان بولٹن کو اس طرح عہدے سے ہٹائے جانے کے حوالے سے تفصیلات تو نہیں بتائی گئیں تاہم ڈونلڈٹرمپ نے اپنے ٹویٹ میں کہا کہ مجھے جان بولٹن کی بیشتر تجاویز سے شدید اختلاف تھا،،،امریکی صدر کے مطابق جان بولٹن کی جگہ نئے قومی سلامتی کے مشیر کا اعلان آئندہ ہفتے کیا جائے گا۔امریکی صدر کے ٹویٹ سے کچھ ہی دیر قبل وائٹ ہاؤس کے پریس آفس کی جانب سے بتایا گیاتھا کہ جان بولٹن کچھ ہی دیر بعد امریکا کے سیکریٹری آف اسٹیٹ مائیک پومپیو کے ہمراہ دہشت گردی کے مسئلے پر پریس کانفرنس کریں گے۔
دوسری جانب جان بولٹن نے امریکی صدر کی جانب سے انہیں عہدے سے ہٹائے جانے پر سماجی روابط کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر ٹوئٹ میں بتایا کہ مجھےعہدے سے ہٹایا نہیں گیا بلکہ میں خود مستعفی ہونا چاہتا تھا اور میں نے گزشتہ رات امریکی صدر سے اس خواہش کا اظہاربھی کیا تھا جس پر امریکی صدر نے کہا تھا کہ اس مسئلہ پرکل بات کریں گے۔تجربہ کارجان بولٹن عراق جنگ اوردیگرفیصلوں کےحوالےسے متنازع شخصیت رہے ہیں۔اس کےعلاوہ انہیں ایران، وینزویلا اور دیگر متنازع معاملات میں مداخلت کےحوالےسےوائٹ ہاؤس میں اہم طاقتور شخصیت کے طور پر بھی جانا جاتا ہے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.