ٹرمپ نےمشرق وسطیٰ جانےکو امریکی تاریخ کی بڑی غلطی قراردیدیا

0
امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا ہے کہ جلد ہی افغانستان میں امن کی صورتحال کو دیکھتے ہوئے امریکی فوجیوں کی تعداد میں اضافہ کیا جائے گا اور یہ تعداد بڑھا کر 8 ہزار تک لے آئیں گے ۔اپنے ایک بیان میں ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا تھا کہ افغانستان میں امریکی فوجیوں کی تعداد میں اضافہ مستقل بنیادوں پر نہیں کیا جائے گا بلکہ رواں سال امریکی صدارتی انتخاب تک افغانستان میں 4 سے5 ہزار تک امریکی فوجی رہ جائیں گے۔ انہوں نے مزید کہا کہ یہ نہیں بتاسکتا کب لیکن ہم بڑی حد تک افغانستان سے باہرآجائیں گے۔امریکی صدر کا کہنا تھا کہ ہم نے شام سے داعش کو نکالا،لاتعداد دہشت گردوں کو گرفتار اور ہلاک کیا لیکن ہمیں کبھی بھی مشرق وسطیٰ میں نہیں جانا چاہیے تھا کیونکہ مشرق وسطیٰ میں جانا امریکا کی تاریخ کی واحد بڑی غلطی ہے۔رواں برس 29 فروری کو افغان طالبان اور امریکا کے درمیان 18 سالہ طویل جنگ کے خاتمے کے لیے تاریخی امن معاہدے پر دستخط ہوئے تھےجس کے تحت 14 ماہ میں تمام امریکی اور نیٹو افواج کا افغانستان سے انخلاء ہوگا، ابتدائی 135 روز میں امریکا افغانستان میں اپنے فوجیوں کی تعداد 8600 تک کم کرے گا اور اس کے ساتھ ساتھ اتحادی افواج کی تعداد بھی اسی تناسب سے کم کی جائے گی۔

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: