یہ ہے میراپیاراپاکستان

0
اس میں کوئی دو رائے نہیں کہ پاکستان دنیا کے خوبصورت ترین ممالک میں شمار ہوتا ہے بلکہ اگر گلگت بلتستان اور دیگر شمالی علاقوں کی بات کی جائے تو دنیا میں ان علاقوں کی خوبصورتی کاکوئی ثانی نہیں جبکہ دنیا کے ایک مستند اشاعتی ادارے نے 2020ءمیں پاکستان کو سیاحت کے لیے دنیا کا نمبر ون ملک قرار دیا ہے۔وادی نلتر اپنی رنگین جھیلوں کی وجہ سے مشہور ہے، چیڑ کے جنگلات سے گھِری یہ وادی دنیا سے الگ تھلگ اور پرسکون جگہ معلوم ہوتی ہے جبکہ وادی نیلم کا شمار پاکستانی کشمیر کی خوبصورت ترین وادیوں میں ہوتا ہے جہاں دریا، صاف اور ٹھنڈے پانی کے بڑے بڑے نالے، چشمے، جنگلات اور سرسبز پہاڑ ہیں۔سکردو کے قریب واقعی شنگریلا ریزورٹس سیاحوں کے لیے ایک مشہور تفریح گاہ ہےاور کی خاص بات ایئر کرافٹ کے ڈھانچے میں بنایا گیا ریسٹورنٹ ہے ۔ چین اور افغانستان سے ملحقہ سرحد پر واقع وادی گوجال بھی خوبصورتی میں اپنی مثال نہیں رکھتیہمالیہ کے دامن میں واقع دیوسائی دنیا کا سب سے بلند اور اپنی نوعیت کا واحد پہاڑی میدان ہے جو سال کے 8 ماہ یہ مقام برف سے ڈھکا رہتا ہے ۔ شیوسر جھیل بھی اس کا حصہ ہےجبکہ استور کے قریب واقع راما گاؤں بھی خوبصورتی کی تصویر ہے جہاں نیلے آسمان پر بادلوں کے ٹکڑے پہاڑ کی چوٹیوں کو چھوتے گزرتےہیں
ہندوکش کے پہاڑوں پرسرسبز پائے کا وسیع میدان اپنے اندر سیاحوں کو کھینچنے کی زبردست کشش رکھتا ہے۔ اکثر اوقات دھند اور بادلوں میں گھِرے اس مقام کو جگہ جگہ بنے پانی بھرے چھوٹے گڑھے، گھڑ سوار، جنگلی پھول اور مکڑا پِیک کی سرسبز چوٹی مل کر جادو اثر بنا دیتے ہیں۔
گانچھے،،،سنگلاخ نوکیلے پہاڑوں، بہتے نیلگوں پانیوں، بلندی سے گرتی آبشاروں کی یہ سرزمین قدرتی و انسانی حسن سے مالا مال ہے۔ گانچھے کا صدر مقام خپلو اپنے نام کی طرح خوبصورت ہے۔ اس کے علاوہ”مرغزار“ ضلع سوات کا پرفضا مقام ہے جبکہ سیاح علاقے کے قدرتی حسن کے ساتھ ساتھ وہاں واقع ایک تاریخی عمارت سفید محل کی سیر کرنے بھی جاتے ہیں۔
مبارک ولیج کراچی کا دوسرا بڑا ماہی گیر گاﺅں ہے جس کی سرحدیں گڈانی سے لگتی ہیں، یہاں کے نظارے سنہری چٹانوں اور نیلگوں شفاف پانی کے انوکھے امتزاج کے گھیرے میں لپٹے نظر آتے ہیں۔ رنی کوٹ26 کلومیٹر رقبے پر پھیلا ہوا دنیا کا سب سے بڑا قلعہ ہے، مگر اس کے باوجود حکام یہاں سیاحت کو فروغ دینے میں ناکام رہے ہیں۔پنجاب کی سابقہ ریاست بہاولپور تاریخی عمارات، یادگاروں اور باغات کے خزانے کی مالک ہے جن کے بارے میں آپ نے کبھی سنا بھی نہیں ہوگا۔ سندھ کا علاقہ گورکھ ہل بھی دیکھنے سے تعلق رکھتا ہے جہاں موسم سرما میں برفباری وے لطف اندوا ہونےکیلئے سیاحوں کی بڑی تعداد ادھر کا رخ کرتی ہے۔

جواب دیجئے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: