وزیراعظم کا طورخم بارڈر24 گھنٹے کیلئے کھولنے کا اعلان

وزیراعظم کے طورخم بارڈر کھولنے کے اعلان پر جہاں تاجربرادری اور ٹرانسپورٹرز میں خوشی کی لہر دوڑگئی ہے وہیں انہوں نے تجارت میں مزید سہولیات کا مطالبہ بھی کردیا،،،طورخم سرحد صبح سات سے رات آٹھ بجے تک کھولی جاتی ہے
اس موقع پر تاجربرادری کا کہنا ہے کہ وزیراعظم کے طورخم بارڈر کو 24 گھنٹوں کیلئے کھلا رکھنے کا اقدام انتہائی شاندار ہے،،،ایک دن میں 5سو کے لگ بھگ گاڑیاں گزرتی تھیں جو کہ اب بڑھ کر ایک ہزار تک ہوجائیں گی
تاجروں کا کہنا ہے کہ ضلع خیبر قدیم تجارتی گزرگاہ ہے،،،طورخم بارڈر 24 گھنٹے کھولنے سے نہ صرف پاکستان بلکہ افغانستان کی معیشت کو بھی فائدہ ہوگا
۔ 2روز قبل وزیراعظم عمران خان نےطورخم بارڈر 24 گھنٹے کھولنے کیلئے متعلقہ حکومتی اداروں کو 6 ماہ کے اندر انتظامات مکمل کرنے کی ہدایات جاری کی تھیں۔،،،وزیراعظم کا اس حوالے سے کہنا تھا کہ پاک افغان طورخم بارڈر کھولنے سے دونوں ملکوں کے درمیان عوامی رابطے مضبوط ہوں گےاوردوطرفہ تجارت کے فروغ میں مدد ملے گی۔ پاک افغان دوطرفہ تجارت 2012 میں سالانہ 3سو پچاس ارب تھی جو کم ہو کر 2018 میں صرف ایک ارب رہ گئی تھی۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.