ساتھیوں کی رہائی میں تاخیر پر طالبان جنگجوؤں کی ناراضگی

0
افغان میڈیا کے مطابق طالبان نے پہلا حملہ قندوز کی چیک پوسٹ پر کیا، حملے میں 5 اہلکار ہلاک اور 7 زخمی ہوگئے۔ حملہ آور افغان فوج کا اسلحہ اور دو گاڑیاں بھی اپنے ہمراہ لے گئے۔دوسری جانب صوبے جوزجان کی سیکیورٹی چیک پوسٹ پر بھی موٹر سائیکل سوار درجن بھر سے زائد طالبان جنگجوؤں نے حملہ کردیا جس کے نتیجے میں 12 اہلکار ہلاک اور 8 زخمی ہوگئے۔ اس کارروائی کے بعد بھی حملہ آور اپنے ہمراہ افغان فوج کا اسلحہ اور گاڑیاں لے گئے۔
ادھر افغان حکام نے طالبان کی جانب سے کارروائیوں پر اپنے ردعمل میں کہا کہ ایسے پرتشدد کارروائیاں افغانستان کے مستقبل اور امن معاہدے کیلئے نقصان دہ ہیں اس لئے جنگجوؤں کو کسی بھی ایسی کارروائی سے قبل سوچنا چاہئے۔
افغان حکومت اور طالبان جنگجوؤں کی جانب سے سیز فائر کے اعلان کے باوجود گزشتہ ایک ہفتے کے دوران جنگجوؤں کے حملوں میں ہلاک ہونے والے اہلکاروں کی تعداد 171 ہوگئی ہے جب کہ 250 سے زائد زخمی ہوئے ہیں۔
29 فروری کو طالبان اور امریکا کے درمیان ہونے والے امن معاہدے کے باوجود افغانستان میں تاحال امن قائم نہیں ہوسکا ہے، طالبان معاہدے کے تحت اپنے اسیروں کی رہائی کے عمل میں سست روی پر ناراض ہیں جب کہ حکومت رہائی کو حملے روکنے سے مشروط کر رہی ہے۔

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: