مہلک وائرس سے بچاؤ کی امیدیں بڑھنےلگیں

0
برطانیہ کی آکسفورڈ یونیورسٹی کے ماہرین کی فارما کمپنی” آسٹرا زینیکا” کے اشتراک سے بنائی گئی ویکسین کی مریضوں میں اینٹی باڈیز اور ٹی سیلز پیدا کرنے میں کامیاب رہی، جس کے بعد برطانوی سائنسدانوں نے 80 فیصد امید ظاہر کی ہے کہ کرونا کے خلاف ویکسین ستمبر تک آجائے گی۔دوسری جانب امریکی بائیوٹیک فرم "موڈرنا” نے بھی اعلان کیا ہے کہ اس کی تیار کردہ کرونا ویکسین 27 جولائی کو انسانی آزمائش کے آخری مرحلے میں داخل ہو جائے گی جس میں 30 ہزار افراد پر اس ویکسین کے ٹیسٹ کئے جائیں گے ۔ادھر روسی فوج نےبھی عالمی وبا کےخلاف محفوظ ویکسین کے کامیاب انسانی ٹرائل کا دعویٰ کیاہے،روس کی فرسٹ ماسکو سٹیٹ میڈیکل یونیورسٹی اور مین ملٹری کلینکل برڈنکل ہسپتال کی 2 ٹیموں نے کرونا ویکسین کی تیاری کے سلسلے میں پہلا فیز مکمل کرلیا ہے۔ کورونا ویکسین کا تجربہ 18 رضاکاروں پر کیا گیا اور تمام رضا کاراب کورونا سے محفوظ ہیں جنہیں اسپتال سے بھی ڈسچارج کردیا گیا ہے۔

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: