معروف لوک گلوکاراستاد جمن کی30ویں برسی

0
عشق کی بے اختیاری میں ڈوبی لوک شاعری کو اپنے سروں میں ڈھالنے والے والے استاد محمد جمن 10 اکتوبر 1935 کو بلوچستان کے ایک قصبے سورا میں پیدا ہوئے۔ استاد محمد جمن کو سُر اور سنگیت ورثے میں ملا ۔تاہم انہوں نے ریڈیو پاکستان کراچی سینٹر سے اپنے کیریر کا آغاز کیا۔ اورکلاسیکی موسیقی کے رچائو سے فوک گائیکی کو ایک الگ شناخت دی۔ان کے مشہور گیتوں میں آرایا نی پنوں، روندے عمر لنگائی، راگ رانو، اور اساں عشق نماز جدوں نیتی اے سمیت دیگر بہت سے گیت شامل ہیں۔حکومت پاکستان کی جانب سے استاد محمد جمن کی فنی خدمات کے اعتراف میں انہیں 23 مارچ، 1980ء کو صدارتی تمغہ برائے حسن کارکردگی سے نوازا گیا۔ استاد محمد جمن نےبیدل، گولڈ، ساگا اور لطیف ایوارڈز بھی اپنے نام کیے۔جمن خان 24 جنوری 1990 کو فانی دنیا سے کوچ کر گئے تاہم آج بھی اپنے چاہنے والوں کے دلوں میں زندہ ہیں۔

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: