سلامتی کونسل میں امریکا کو ناکامی کا سامنا

0
اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں ایران پر ہتھیاروں کی عالمی پابندی میں توسیع کی امریکی کوشش مسترد کردی گئی۔ سلامتی کونسل کے اجلاس میں واشنگٹن نے تہران پر غیر معینہ مدت تک عالمی پابندی میں توسیع کی قرارداد پیش کی جس کو صرف ڈومینیکن ریپبلک کی حمایت حاصل رہی۔یہ پابندی ایران اور 6 عالمی طاقتوں کے مابین 2015 میں ہونے والے جوہری معاہدے کے تحت 18 اکتوبر کو ختم ہونے والی ہے اور اس حوالے سےامریکا کو قرارداد کی منظوری کے لیے کم از کم 10 ووٹ درکار تھے۔فرانس، جرمنی اور برطانیہ سمیت 15 رکنی باڈی کے 11 اراکین نے ووٹ دینے سے گریز کیا۔روس اور چین نے 13 سالہ پابندی میں توسیع کی شدید مخالفت کی۔
امریکی سیکریٹری خارجہ مائیک پومپیو نےقرارداد کی ناکامی کو سلامتی کونسل کی ناکامی قرار دیتے ہوئے کہا کہ بین الاقوامی امن اور سلامتی کے دفاع میں مذکورہ فیصلہ ناقابل معافی ہے۔ ادھر اقوام متحدہ میں چین کے سفیر جانگ جون نے ایک بیان میں کہا کہ ایک مرتبہ پھر ظاہر ہوگیا ہے کہ یکطرفہ نظام کی کوئی حمایت نہیں کرے گا اور دھونس ناکام ہوگی۔دوسری جانب ایران نے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں امریکا کی ناکامی پر کہا کہ امریکا ذلت کے ساتھ اس سازش میں ناکام رہا۔ایران کی وزارت خارجہ کے ترجمان عباس موسوی نے ٹوئٹ میں کہا کہ اقوام متحدہ کی 75 برس کی تاریخ میں امریکا کبھی بھی اتنا تنہا نہیں تھا۔

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: