نجی سکولوں نے سرکاری اداروں کو فیل کر دیا: چیف جسٹس ثاقب نثار

چیف جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں بنچ نے نجی سکولوں کی اضافی فیسوں سے متعلق کیس کی سماعت کی۔دوران سماعت چیف جسٹس پاکستان نے ریمارکس دیئے کہ حکومت تعلیمی اداروں کی کمی کوپورانہیں کرپائی،پرائیویٹ سکولوں نے ہی سرکاری اداروں کوفیل کیا۔
عدالتی معاون نے کہا کہ پرائیویٹ سکول خودکوریگولیٹ کراناہی نہیں چاہتے،جسٹس اعجاز الاحسن نے ریمارکس دیئے کہ پڑھالکھا پنجاب اوردیگرصرف نعرے تھے،عدالتی معاون نے کہا کہ عدالت کاعبوری حکم مناسب آرڈرہے،زاہد حامد ایڈووکیٹ نے کہا کہ 6 ماہ میں تعلیم پرکوئی ترجیح نظرنہیں آئی،اس پر جسٹس فیصل عرب نے کہا کہ 70 سال کی بات بھی توکریں ناں،زاہد حامد نے کہا کہ اٹھارویں ترمیم کے بعدوفاق کاتعلیم سے کنٹرول ختم ہوگیا۔
جسٹس فیصل عرب نے کہا کہ سندھ میں ایک ایک کمرے کا سکول بناہے،وڈیرے کے گھرکے سامنے کمرہ بنادیاجاتاہے،وڈیرہ سکول میں ملازم کوٹیچرلگوا دیتا ہے،ملازم سارادن وڈیرے کے پاوں دباتارہتاہے۔
چیف جسٹس نے کہا کہ سکولوں کوریگولیٹ کرنے کیلئے مضبوط ریگولیٹرچاہئے،معاملے کی فائنل سماعت کے بعدعملدرآمدبنچ بنادیں گے

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.