پاکپتن اراضی کیس،سپریم کورٹ نے جے آئی ٹی تشکیل دےدی

سپریم کورٹ آف پاکستان میں پاکپتن اراضی کیس کی سماعت چیف جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں بنچ نےکی،نوازشریف کے وکیل،محکمہ اوقاف کے حکام اور دیگر عدالت میں پیش ہوئے،،، دوران سماعت عدالت نے کہا کہ دستاویزات سے ثابت ہے نوازشریف نے بطوروزیراعلیٰ اوقاف جائیدادنجی ملکیت میں دی،چیف جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ نوازشریف کہتے ہیں ان کی یادداشت ہی چلی گئی ہے،اور پھر کہتے ہیں اراضی ڈی نوٹیفائی نہیں کی،آپ جانتے ہیں یہ بات غلط ثابت ہوگئی تونتائج کیاہوں گے؟عدالت نے پاکپتن اراضی کیس میں جے آئی ٹی تشکیل دیدی،ڈی جی نیکٹا خالق دادلک جے آئی ٹی کی سربراہی کرینگے،عدالت نے کہا کہ جے آئی ٹی میں آئی ایس آئی اورآئی بی کے افسران بھی شامل ہوں گے،جے آئی ٹی کے قواعدوضوابط طے کرتے ہوئے عدالت نے جے آئی ٹی ارکان کو27 دسمبر کو سپریم کورٹ میں پیش ہونے کا حکم دیدیا۔واضح رہے کہ گزشتہ سماعت پر پیشی کے دوران نوازشریف نے عدالت سے کہا تھا کہ جے آئی ٹی بنانے کا میرا تجربہ اچھا نہیں اس لئے تحقیقات کسی اور سے کرا لیں۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.