تیل تنصیبات پر حملوں میں ایرانی ہتھیار استعمال ہوئے

ایران اور سعودی عرب تنازعہ شدت اختیار کرنےلگا،، سعودی فوج کے سربراہ نے تیل تنصیبات پر حملے کا الزام ایران پر لگادیا، کرنل ترکی المالکی کاکہنا ہےکہ حوثی باغیوں نے حملے کی ذمہ داری قبول کی لیکن حقائق اس کے برعکس ہیں، حملے میں ایرانی ہتھیار استعمال ہوئے جو یمن سے فائر نہیں ہوئے
کرنل ترکی المالکی نے جلد حقائق عوام کے سامنے لانے اعلان کیا،دوسری طرف ایران نے سعودی عرب کا الزام مسترد کر دیا، ایرانی وزارت خارجہ کے ترجمان عباس موسوی کہتے ہیں الزامات ناقابل قبول اور بے بنیاد ہیں،جس کی سخت مذمت کرتے ہیںسعودی عرب کی تیل کی تنصیبات پر ہفتے کے روز ڈرون حملوں کے بعد آئل ریفائٹری میں آگ لگ گئی جس کے بعد تیل کی پیداوار کے یونٹ بند کردیئے گئے ۔ اس اقدام سے دنیا کو تیل کی سپلائی کم ہوگئی اور عالمی مارکیٹ میں تیل کی قیمتوں میں نمایاں اضافہ دیکھنے میں آیا ۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.