پاکستان سےداعش کی منتقلی،روس نےاپنے وزیر کا بیان مسترد کردیا

روسی وزارت خارجہ کی ترجمان ماریہ زخاروف نے کہا ہے کہ خطے سمیت افغانستان میں جاری دہشتگری کا خاتمہ کرنے کے لیے پاکستان کے ساتھ مل کر کام کر رہے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ گزشتہ ہفتے روسی نائب وزیر داخلہ ایگور زوبوف کی جانب سے سامنے آنے والا بیان جس میں کہا گیا تھا کہ پاکستان سے نامعلوم ہیلی کاپٹرز کے ذریعہ داعش کے شدت پسندوں کو روس تاجکستان سرحد پرمنتقل کیا گیا ہے صرف زبان کا پھسلنا تھا۔
روسی وزارت خارجہ کی ترجمان کا کہنا تھا کے ہم پاکستان کے ساتھ افغان امن ایجنڈے کو تکمیل تک پہنچانے اور دونوں ممالک کے درمیان مشترکہ مفادات کے تحت داعش جیسی شدت پسند تنظیم کو افغانستان میں مستحکم ہونے سے روکنے کیلئے بھرپور تعاون کررہے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ افغان تاجک سرحدی علاقے میں داعش جنگجوؤں کی بڑھتی ہوئی سرگرمیوں اور توسیع کے حوالے سے روس اور پاکستان کے خدشات مشترکہ ہیں۔
روسی وزیر ایگور زوبوف نے 28 جنوری کو دئیے گئے بیان میں کہا تھا کہ پاکستانی سرحد سے نامعلوم ہیلی کاپٹروں کے ذریعے داعش جنگجوؤں کو تاجکستان بارڈر پر منتقل کیا گیا تھا۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.