تبدیلی سرکار نے بجٹ کے نام پر غریبوں پر بجلی گرا دی

0

قومی اسمبلی میں پیش کیے جانے والے وفاقی بجٹ 21-2020ء میں بجلی صارفین کی سبسڈی میں 111 ارب روپے کی کمی کر دی گئی ۔ بجٹ دستاویز کے مطابق کے الیکٹرک کی سبسڈی میں 34 ارب روپے کمی کی گئی جبکہ دیگر بجلی کی تقسیم کار کمپنیوں کے صارفین کے لیے سبسڈی میں 77 ارب روپے کی کٹوتی کی گئی ہے۔ بجٹ دستاویز میں کہا گیا ہے کہ کے الیکٹرک کے سوا دیگر بجلی صارفین کے لیے نظرِ ثانی شدہ سبسڈی 201 ارب روپے ہے۔دستاویز کے مطابق 201 ارب روپے کی سبسڈی آئندہ مالی سال کے لیے 124 ارب روپے کر دی گئی ، سبسڈی 300 یونٹ سے کم بجلی استعمال کرنے والے گھریلو اور زرعی ٹیوب ویل استعمال کرنے والے صارفین کو دی جاتی ہے اس کے علاوہ 300 یونٹ سے کم بجلی استعمال کرنے والے فاٹا میں ضم علاقوں اور آزاد کشمیر کو بھی سبسڈی دی جاتی ہے۔
بجٹ دستاویز کے مطابق کے الیکٹرک کے صارفین کے لیے سبسڈی انسٹھ ارب روپے سے کم کر کے ساڑھے 25 ارب روپے کر دی گئی ہے جبکہ کے الیکٹرک کے 300 یونٹ سے کم بجلی استعمال کرنے والے صارفین کے لیے 25 ارب روپے کی سبسڈی کو 10 ارب روپے کر دیا گیا ہے۔
بجٹ دستاویز میں مزید کہا گیا ہے کہ کے الیکٹرک میں انڈسٹریل سپورٹ پیکیج کی سبسڈی 10 ارب روپے سے کم کر کے 5 ارب روپے کر دی گئی ہے اس کے علاوہ وفاقی بجٹ میں کے الیکٹرک کو سستی ایل این جی کی فراہمی پر سبسڈی بھی 14 ارب روپے کم کر دی گئی ہے۔

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: