دو بوند زندگی موت کی وجہ بننے لگے

پولیو موذی مرض ہے جوعموماً 5 سال سے کم عمر بچوں کو اپنا شکار بناتا ہے۔اس انفیکشن کےموت کے علاوہ 200 نتائج میں سے ایک معذوری بھی ہے ۔پولیو کے باعث معذوری کا کوئی علاج نہیں ۔ ویکسین کے دو قطرے ہی بچوں کو اس مرض سے بچا سکتے ہیں لیکن افسوسناک بات یہ ہے کہ اب یہی دو بوند زندگی کے قطرے موت کا سبب بننے لگے ہیں ۔جبکہ صحت کے عالمی اعداد و شمار کے مطابق چارافریقی ممالک میں پولیو کے 9 ایسے کیسز سامنے آئے ہیں جس کا سبب ویکسین میں موجود وائرس سے معذوری کا شکار ہوئے۔ان ممالک میں نائیجیریا، کانگو، سینٹرل افریقن رپبلک اور انگولا شامل ہیں ۔رپورٹ کے مطابق پاکستان اور افغانستان میں بھی دی جانے والی ویکسین میں پولیو وائرس 2 ہوسکتا ہے۔گزشتہ ہفتے عطیات دہندگان نے پولیو کے خاتمے کے لیے 2 ارب 60 کروڑ ڈالر فراہم کرنے کا عہد کیا جو 1988 میں شروع ہونے والے انسداد پولیو پروگرام کا حصہ ہے جس کا مقصد سال 2000 تک دنیا سے پولیو کے مرض کا خاتمہ تھا۔ تاہم اب تک کئی ڈیڈ لائنز گزر چکی ہیں لیکن یہ مرض اب بھی معذوری کا سبب بن رہا ہے۔
شاید آپ یہ بھی پسند کریں

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.