کینیڈامیں پولیس کا بھیس بدل کر مسلح افراد کی فائرنگ

0
نووا اسکاٹیا کے حکام نے اس دوران دیہی علاقے پورٹاپیکا کے رہائشیوں کو گھروں میں رہنے کا مشورہ دیا۔پولیس نے بتایا کہ مشتبہ شخص پولیس کار میں تھا۔اطلاعات کے مطابق مسلح شخص نے علاقے کے متعدد مقامات پر لوگوں کو نشانہ بنایا اور پولیس ہلاک افراد کی تفصیلات جمع کررہی ہے۔پولیس نے مزید ہلاکتوں کا خدشہ ظاہر کیارائل کینیڈین ماؤنٹڈ پولیس کانسٹیبل ہیڈی اسٹیونسن، جو 23 سال فوج میں خدمات انجام دے چکے،وہ بھی ہلاک ہونے والوں میں شامل تھے۔نووا اسکاٹیا کے آر سی ایم پی کے کمانڈنگ افسر،اسسٹنٹ کمشنر لی برجر مین نے کہا کہ ہیڈی اسٹیونسن نے ڈیوٹی کے دوران جواب دیا اور خدمات انجام دیتے ہوئے اپنی جان سے ہاتھ دھو بیٹھے۔انہوں نے بتایا کہ دو بچے اپنی ماں اور ایک شوہر اپنی بیوی،والدین اپنی بیٹیوں اور دیگر متعدد اپنے دوستوں اور رشتے داروں سے محروم ہوگئے۔ووا اسکاٹیا پولیس نے مبینہ حملہ آور کی شناخت 51 سالہ گیبریل وورٹ مین کے طور پر کی ہے۔مقامی پولیس کے مطابق مسلح حملہ آور رائل کینیڈا کے ماؤنٹڈ پولیس میں ملازمت نہیں کرتا تھا لیکن وہ ’آر سی ایم پی کی وردی پہنے ہوئے تھا‘۔پولیس نے مزید بتایا کہ بعد میں مسلح شخص نے کاریں تبدیل کیں۔پولیس نے اس بارے میں کوئی تفصیلات فراہم نہیں کیں کہ مشتبہ مسلح شخص کی موت کیسے ہوئی۔دوسری جانب کینیڈا کے وزیر اعظم جسٹن ٹروڈو نے واقعہ کو ’خوفناک صورتحال‘ قراردے دیا۔ نووا اسکاٹیا کے وزیر اعظم اسٹیفن میک نیل نے صحافیوں کو بتایا کہ ’یہ ہمارے صوبے کی تاریخ میں تشدد کا سب سے افسوس ناک واقعہ ہے‘۔

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: