سامان کی پلاسٹک ریپنگ لازمی قراردینے کاحکمنامہ واپس

سول ایوی ایشن نے سوشل میڈیا پر شدید تنقید کے بعد پاکستان بھر کے تمام ایئرپورٹس پر اندرون ملک اور بیرون ملک جانے والے مسافروں کیلئے سامان کی پلاسٹک ریپنگ لازمی قرار دینے کے حکمنامہ کو واپس لے لیا۔وفاقی وزیر انسانی حقوق شیریں مزاری نے ٹوئٹر پر اپنے بیان میں سول ایوی ایشن کے نئے حکم نامے کو جاری کرتے ہوئے اس فیصلے سے آگاہ کیا اور وضاحت کی کہ یہ فیصلہ وفاقی حکومت کا نہیں تھا۔شیریں مزاری کا کہنا تھا کہ غلط نوٹیفکیشن کو واپس لے لیا گیا ہے، اس حوالے سے ایک انکوائری ہوگی کہ سی اے اے میں کیسے اور کس نے اس طرح کا نوٹیفکیشن جاری کیا۔وفاقی وزیر نے مزید کہا کہ پوری بیوروکریسی کو علم ہونا چاہیے کہ وفاقی حکومت کا مطلب کابینہ ہے، جہاں یہ معاملہ کبھی زیر بحث نہیں آیا ۔سی اے اے کی جانب سے گزشتہ دنوں جاری ایک نوٹیفکیشن میں کہا گیا تھا کہ مسافروں کو سامان کی پلاسٹک ریپنگ کی مد میں فی بیگ 50 روپے ادا کرنا ہوں گے،سول ایوی ایشن کو اس فیصلے پر سوشل میڈیا پر شدید تنقید کا سامنا کرنا پڑا،جس کےبعد حکمنامہ واپس لے لیاگیا۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.