ملاوٹ مافیا ہوجائے ہوشیار،پنجاب فوڈاتھارٹی اِن ایکشن

ڈائریکٹر جنرل فوڈ اتھارٹی محمد عثمان کی سربراہی میں ٹیم نے لاہورکےمضافاتی علاقے ‘باوا دی کٹیا’ گاؤں میں کارروائی کی جس کے نتیجے میں جعلی کاربونیٹڈ ڈرنکس بنانے والی فیکٹری کو بند کرتے ہوئے مضر صحت ڈرنکس پکڑ لیں۔ آپریشن کے دوران 20 ہزار سے زائد لیبلز سمیت 50 کلو مصنوعی فلیورز اور کیمیکلز برآمد کیے گئے جو کینسر، السر اور انتڑیوں کی بیماریوں کا سبب بنتے ہیں۔
ڈی جی فوڈز کے مطابق شہر کے مضافاتی علاقے میں جعلی یونٹ لگایا گیا تھا جہاں گندے پانی، کیمیکلز، مصنوعی فلیورز اور رنگ سے جعلی مشروب بنایا جارہا تھا۔فوڈزاتھارٹی حکام نے بتایا کہ معروف برانڈ کے مشروب کی بڑی کھیپ عید کے لیے تیارکی جارہی تھی اور کارروائی کرتے ہوئے5 ہزار سے زائد جعلی کاربونیٹڈ ڈرنکس کی بوتلوں کو تلف کیا گیا،،،جبکہ گیس سلنڈر، فلنگ مشین، کمپریسر اور موٹر بھی ضبط کرلی گئی ہے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.