مظلوم کشمیری عوام کی حمایت میں حکومت اوراپوزیشن ایک پیج پر

پارلیمانی کمیٹی برائے کشمیرکےچیئرمین فخر امام نےپارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس میں بھارت کی جانب سے مقبوضہ کشمیر کا خصوصی درجہ ختم کرنے کیخلاف قرارداد پیش کی،جسے بحث کے بعد متفقہ طورپرمنظورکرلیاگیا۔قرارداد میں کہا گیا کہ پاکستان مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم کی سختی سےمذمت کرتا ہے، جغرافیائی حیثیت تبدیل ہونے سے کشمیری عوام کے حقوق کی خلاف ورزی بھی ہوگی، بھارتی یکطرفہ اقدام اقوام متحدہ کی قراردادوں کے خلاف ہے۔قرارداد میں مطالبہ کیا گیا کہ مسئلہ کشمیر اقوام متحدہ کی قراردادوں کی روشنی میں استصواب رائے اور کشمیری عوام کی امنگوں کے مطابق حل کیا جائے،بھارت فوری طور پر کشمیری عوام پر بد ترین مظالم بند کرے، کشمیر میں مواصلاتی رابطہ بحال کیاجائے،قرارداد میں بھارت سے کہا گیا کہ وہ فوری طور پر کشمیری رہنماؤں کو رہا کرے اور عالمی معاہدوں اور باہمی وعدوں کی پاسداری کرے۔قرارداد میں بھارت کی جانب سے ایل اوسی پر کلسٹر بموں سے بچوں سمیت کشمیریوں کو نشانہ بنانے کی مذمت کی گئی، دہشت گردی کے نام پر پاکستان کے خلاف پروپیگنڈے کی بھی مذمت کی گئی۔قرارداد میں کہا گیا کہ پاکستان کشمیری عوام کی سفارتی، اخلاقی اور سیاسی حمایت جاری رکھے گا اور کشمیری عوام کے شانہ بشانہ کھڑا رہے گا۔قرارداد میں او آئی سی پر اقوام متحدہ کے ساتھ مل کر کام کرنے پرزور دیاگیا۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.