پاکستان کا بھارتی جارحیت کےجواب میں پھر امن کا پیغام

پاکستان کی جانب سے کرتار پور راہداری کو پاک بھارت تناؤ کی نذر نہیں ہونے دیا گیا، راہداری پر کام آخری مراحل میں داخل ہو گیا ہے۔ کرتار پور راہداری پر کام 31 اگست تک مکمل کر لیا جائے گا، دفتر خارجہ نے بھی کرتار پور راہداری کھولنے کے حوالے سے اپنا ہوم ورک تیز کر دیا ہے۔کرتار پور راہداری کا افتتاح 11 نومبر کو پروقارتقریب میں کیا جائے گا۔ باباگرونانک کی 550 ویں سالگرہ کی تقریبات کےسلسلے میں بڑی تقریب منعقدکی جائےگا جبکہ وزیر اعظم عمران خان کرتارپور راہداری کی افتتاحی تقریب میں شرکت کریں گے،عمران خان کے ہمراہ وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی اوردیگر وزراء بھی تقریب میں شریک ہوں گے، 500 سے زائد سکھ یاتریوں کی باباگرونانک کے 550 جنم دن کی تقریبات شرکت متوقع ہے۔وزیراعظم عمران خان نے ہی 28 نومبر 2018ء میں کرتارپور راہداری منصوبے کا افتتاح کیا تھا،جنوری 2019 میں پاکستان نے کرتار پور راہداری معاہدے کا مسودہ بھارت سے شئیر کیا تھا۔ اس راہداری کے حوالے سے پاکستان اور بھارتی وزارت خارجہ میں رابطے جاری رہے، راہداری کھولنے کافیصلہ دونوں ملکوں کی سکھ برادری کی سہولت ومذہبی حقوق کےمدنظرکیا گیا،

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.