وزن گھٹاؤ،،،نوکری بچاؤ

پڑھی لکھی،سمارٹ ، خوش شکل ،خوش گفتار،،،یہ ہے فضائی میزبان کا معیار،،،،اور عالمی سطح پر یہی معیار رائج ہے….
لیکن جب ہم اپنی قومی ائیرلائن پر نظرڈالتے ہیں تو معاملہ بالکل اس کے برعکس دکھائی دیتا ہے۔۔۔ اور پی آئی اے میں بھاری بھرکم عمررسیدہ ائیرہوسٹسز کی بھرمار ہے،،،یہی وجہ ہے کہ عام زندگی کے ساتھ ساتھ سوشل میڈیا پر بھی اکثر ائیرہوسٹسز کو تنقید کا نشانہ بنایا جاتا ہے۔
گزشتہ دنوں بھی برطانیہ میں مقیم خاتون صحافی شمع جونیجو نے اپنے ٹوئٹر اکاؤنٹ پر تصویر شیئر کرتے ہوئے تحریر کیا کہ ’’دنیا کی سب سے عمر رسیدہ ائیرہوسٹس اس چہرے کے ساتھ مسافروں کو خوش آمدید کہتی ہیں‘‘۔ اس ٹوئٹ میں انہوں نے ہنسنے والا ایموجی بھی استعمال کیا تھا۔

اسی بات کو پیش نظر رکھتے ہیں پی آئی اے نے فضائی میزبانوں ائیر ہوسٹسز کو یکم فروری تک 25 پونڈ وزن کم کرنے کی ہدایت کر دی ہے۔ پی آئی اے حکام نے وزن کم کرنے کے حوالے سے سرکلر جاری کردیا جس میں کہا گیا ہے کہ پی آئی اے کے ضوابط کے مطابق ساڑھے 5 فٹ کے فرد کا وزن 150 پونڈ یعنی 68 کلوگرام سے زائد نہیں ہونا چاہیے۔ ایسی ایئرہوسٹسز جن کا وزن مقررہ معیار سے زیادہ ہے وہ پہلے مرحلے میں 25 پونڈ کم کریں گی۔
حکم نامے کے مطابق اضافی وزن کی حامل ایئرہوسٹسز مارچ میں 20، اپریل میں 15، مئی میں 10 اور جون میں 5 پونڈ وزن کم کریں بصورت دیگر طے شدہ معیار سےزیادہ وزن والی فضائی میزبانوں کو گراؤنڈ کردیا جائےگا۔ دوسری جانب وزن کم کرنے کی ہدایت پر عملے میں تشویش کی لہر دوڑ گئی ہے، عملے نے کہا ہے کہ حکام کا یہ سرکلر سپریم کورٹ کے فیصلے کی خلاف ورزی ہے اگر اسے واپس نہ لیا گیا تو اسے عدالت میں چیلنج کیا جائے گا۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.