افغانستان سےمکمل فوجی انخلاکا ٹاسک نہیں ملا، پیٹرک شین ہین

واشنگٹن میں نیٹو کے سیکریٹری جنرل سے ملاقات کے موقع پر پیٹرک شین ہین نے کہا کہ طالبان کے ساتھ مذاکرات حوصلہ افزا ہیں تاہم ابھی افغانستان سے مکمل فوجی انخلاکا ٹاسک نہیں دیا گیا ۔
سیکریٹری جنرل نیٹو اسٹولسبرگ نے کہا کہ اس وقت تک افغانستان سے نہیں جائیں گے جب تک یقین نہ ہو کہ مقصد پورا ہو چکا ہے ،اس مقصد میں افغانستان کو دہشت گردوں کی محفوظ پناہ گاہوں سے پاک کرنا بھی شامل ہے تاہم افغانستان میں نیٹو افواج کے مستقبل سے متعلق ابھی کچھ نہیں کہا جاسکتا ۔
امریکہ اور طالبان کے مابین گزشتہ ہفتے دوحہ میں چھ روز تک مذاکرات جاری رہے جن میں امریکہ کےافغانستان سے انخلاکے معاہدے پر پیش رفت ہوئی،امریکہ کی جانب سے اٹھارہ ماہ میں افغانستان سے انخلاکا منصوبہ پیش کیا گیا جبکہ طالبان نے جنگ بندی کا امریکی مطالبہ مسترد کردیا ،بعدازاں امریکہ کے نمائندہ خصوصی زلمے خلیل زاد نے افغان صدر اشرف غنی سے ملاقات کی اور انہیں امن مذاکرات کے حوالے سے بریفنگ دی ۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.