لمبی لمبی چھوڑنےمیں بھارتی وزیراعظم مودی جی کاکوئی مقابل نہیں

بھارتی وزیراعظم کا ٹی وی انٹرویو سوشل میڈیا پر مذاق بن گیا۔مودی کا کہنا تھا کہ شاید میں نے پہلی بار 1987-88 میں ڈیجیٹل کیمرہ اورای میل کااستعمال کیا تھا ،مودی نے اپنی گپ کوآگے بڑھاتے ہوئے کہا کہ میں نے1988ءمیں گجرات کے علاقے ویرام گام میں جلسے کے دوران ایل کے ایڈوانی کی ڈیجیٹل کیمرے سے تصویر لی اور نئی دہلی کو ٹرانسمٹ کی، دوسرے دن کلر فوٹو چھپی تو ایڈوانی جی کو حیرانی ہوئی کہ دہلی میں میری فوٹو آج کے آج کیسے چھپ گئی۔
مودی جی نے گپ توماردی لیکن یہ پکڑی بڑی جلدی گئی،،،،سوشل میڈیا پر بہت سے لوگوں نے تبصرہ کرتے ہوئے نشاندہی کی کہ 1995ء تک ای میل کی سہولت دستیاب ہی نہیں تھی۔1988ء میں جب ترقی یافتہ مغربی ممالک میں بھی صرف چند اساتذہ اور سائنسدانوں کے پاس ای میل کی سہولت تھی تو بھارت میں مودی کیسے ای میل استعمال کرتے تھے۔
ڈیجیٹل کیمروں سے متعلق معلومات رکھنے والوں نےبھی سوشل میڈیا پر مودی کو آڑے ہاتھوں لیا اور کہا کہ پہلا ڈیجیٹل کیمرہ 1987ء میں امریکی کیمرہ ساز کمپنی نائیکون نے فروخت کےلئے پیش کیا تھا۔ایک اور صارف نے کہا کہ مودی نے گٹر سے گیس کی طرح ای میل اور ڈیجیٹل کیمرہ ایجاد کیا تھا۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.