مسلمانوں کو تقسیم کرکے حکمرانی کافارمولہ

مودی سرکار کا آئندہ الیکشن جیتنے کیلئے گھناؤنا پلان تیار، پاکستان کے خلاف جنگی جنون ابھارنے اور بھارتی مسلمانوں کو سنی، شیعہ، وہابی میں تقسیم کرنے کا منصوبہ بنا لیا ہے۔ حکومتی کارکردگی کوانتخابی نعرہ بنانے کے بجائےعوام کے جذبات بھڑکانے کے فیصلے پر مشتمل بی جے پی رہنما سبرامنیم سوامی نے اپنی الیکشن پالیسی خود ہی بے نقاب کر دی۔

سبرامنیم سوامی نے تسلیم کیا کہ بی جے پی نے 2014 کا الیکشن بھی ہندوؤں کو اکٹھا کر کے اور مسلمانوں سمیت اقلیتوں میں تفریق ڈال کر جیتا تھا۔ مودی سرکار کی کارکردگی کو عوام نےپانچ ریاستوں کےحالیہ انتخابات میں مسترد کر دیا اور بی جے پی کو بدترین شکست کا سامنا کرنا پڑا۔ اسے چند ماہ بعد لوک سبھا الیکشن کا سیمی فائنل قرار دیا جا رہا ہے۔

سیاسی مبصرین کےمطابق انتہا پسند ہندو جماعت بی جے پی نے حالیہ انتخابات میں اپنی ناکامی کو دیکھتے ہوئے آئندہ الیکشن مذہبی منافرت کی بنیاد پر لڑنے کا فیصلہ کیا ہے جس کے باعث آئندہ پانچ ماہ کے دوران ہندوستان میں مذہبی فسادات اور پاکستانی سرحد پر چھیڑچھاڑمیں اضافے کا خدشہ ہے ۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.