سندھ،پنجاب میں لاک ڈاؤن میں 2 ہفتے کی توسیع،نوٹیفکیشن جاری

0
محکمہ داخلہ سندھ کے نوٹیفیکیشن کے مطابق پلمبر، حجام، الیکٹریشن، مکینک، زرعی مشینری مکینک، سیمنٹ پلانٹ،کھاد انڈسٹری، اینٹوں کے بھٹے، ڈرائی کلینر، بلڈنگ میٹیریل، سینٹری شاپ، ماربلز فیکٹریز، ٹائلز شاپ، ٹیلر،کریانہ اور دودھ دھی کی دکانیں صبح 6 سے رات 9 بجے تک کھولی جاسکیں گی۔اس کے علاوہ الیکٹرک اسٹور، شٹرنگ اسٹور، بیکریز، بینک، ہارڈویئر شاپ، لیبارٹریز، نجی اسپتال اور دیگر صبح 9 بجے سے شام 5 بجے تک کھلیں گے لیکن ماسک اور ہینڈ سینیٹائزر ہونا لازمی قراردیا گیا ہے جبکہ منرل واٹر پلانٹ، بک شاپ، فوٹوکاپی شاپ،کارپینٹرز، رنگ ساز، مستری، مزدور اور میڈیکل سٹورز 24 گھنٹے کھلے رہیں گے۔نوٹیفیکیشن کے مطابق صوبہ سندھ میں شام 5 بجے سے صبح 8 بجے تک عوام کی نقل و حرکت اور موٹر سائیکل کی ڈبل سواری پر مکمل پابندی عائد کردی گئی ہے تاہم ایمرجنسی، میڈیکل عملے، صحافیوں کو سماجی فاصلہ برقرار رکھتے ہوئے استثنیٰ حاصل ہوگا۔ اس کے علاوہ سندھ میں جمعہ کو 12 سے ساڑھے 3 بجے تک عوام کی نکل و حرکت پر مکمل پابندی ہوگی، صرف ساڑھے 3 سے ساڑھے 6 بجے تک دکانيں کھولی جاسکتی ہيں۔ محکمہ داخلہ کے مطابق مساجد کھلی ہوں گی، اذان ہوگی لیکن صرف عملہ نماز ادا کرے گا۔ادھر پنجاب حکومت نے بھی لاک ڈاوَن میں توسیع کا فیصلہ کرتے ہوئے نوٹیفکیشن جاری کردیا، صوبے بھر میں لاک ڈائون کا فیصلہ چیف سیکرٹری پنجاب اعظم سلیمان کی زیر صدارت اجلاس میں کیا گیا۔ جس کے تحت صوبے میں کیمیکلزانڈسٹری، آئی ٹی کمپنیاں، پلمبر، کارپینٹر اور الیکٹریشنز کو کام کرنے کی اجازت ہو گی جبکہ درزی کی دکانیں، ویٹرنری سروسز اور پراپرٹی ڈیلروں کے دفاتر بھی کھولنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔اس کے علاوہ سٹیشنری، شیشہ سازی کے یونٹس، پیپر اینڈ پیکیجنگ، پودوں کی نرسریاں لاک ڈاؤن کی پابندی سے مستثنیٰ ہوں گی۔ معدنیات،عمارات اور سڑکوں کی تعمیر سے منسلک کاموں پر بھی پابندی نہیں ہو گی۔آرکیٹیکٹس اور انجینئرز کی سروسز، سڑکوں کی تعمیرات بھی شروع کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: