لیبیا ئی حکومت نے خلیفہ حفتر کی فورسز سے2شہروں کا قبضہ واپس لے لیا

0
لیبیا ئی حکومت کا کہنا ہے کہ فوج نے متحارب گروپ خلیفہ حفتر کی فورسز کو دارالحکومت طرابلس اور تیونس کی سرحد کے درمیان واقع دو اہم اسٹریٹجک ساحلی شہروں سے بے دخل کردیا گیا ہے۔جی این اے کے ترجمان محمد غنونو نے ایک بیان میں کہا کہ ‘ہماری فورسز نے صرمان اور صبراتا کا کنٹرول حاصل کرلیا ہے اور پیش قدمی جاری ہے’۔رپورٹ کے مطابق حکومتی فورسز نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ فیس بک پر تصاویر جاری کیں جن کے حوالے سے انہوں نے دعویٰ کیا کہ یہ خلیفہ حفتر کی فوج سے قبضے میں لیا گیا اسلحہ ہے۔حکومتی فورسز کے مطابق انہوں نے حفتر کی فوج سے راکٹ لانچرز، 10 ٹینک اور فوجی گاڑیاں قبضے میں لےلی ہیں۔جی این اے کے کمانڈر محمد الغامودی کا کہنا تھا کہ صرمان اور صبراتا کو 6 گھنٹے کی لڑائی کے بعد واپس لیا گیا جس کے لیے فضائی مدد بھی حاصل تھی۔دوسری جانب خلیفہ حفتر کے کمانڈر سیراج کی جانب سے اس حوالے سے کوئی بیان جاری نہیں کیا گیا۔حکومتی فورسز کا کہنا تھا کہ ‘صبراتا اور صرمان پر قبضے سے وہ پورے ساحلی علاقے اور طرابلس کو تیونس سے ملانے والی شاہراہ کو آسانی سے کنٹرول کرسکتے ہیں’۔ان کا کہنا تھا کہ ‘حکومتی فورسز حفتر کے زیر قبضہ مرکزی شہر زوارہ میں لڑنے والی بربر اور عمازیغ فورسز کے ساتھ شامل ہوسکتی ہیں اور مضبوط ایئربیس الواطیہ کی طرف پیش قدمی کرسکتی ہیں’۔

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: