مودی سرکار نے مقبوضہ کشمیرکو باپ کی جاگیر سمجھ لیا

0
مقبوضہ جموں و کشمیر میں بھارت کی حکومت نے سیکیورٹی فورسز کو زمین کے حصول کے لیے درکار 1971 کے سرکلر کے مطابق این او سی کی شرط ختم کردی۔ نئے حکم نامے کے تحت بھارتی فوج، بارڈر سیکیورٹی فورسز، پیراملٹری فورسز اور اسی طرح کے دیگر اداروں کے عہدیدار محکمہ داخلہ کی این او سی کے بغیر زمین حاصل کرسکیں گے۔حکم نامے میں کہا گیا ہے کہ وفاقی علاقہ قرار دیے جانے کے بعد مقبوضہ جموں و کشمیر میں زمین کے حوالے سے 2013 کے قانون میں توسیع ہوئی ہے۔ اس سے قبل نئی دہلی سرکار نے 24 جولائی کومقبوضہ کمشیر کے 35 مختلف مقامات میں ایک ہزار 205 ایکڑ ریاستی زمین پر صنعتیں لگانے کی منظوری دی تھیبھارتی حکومت نے 5 اگست 2019 کو مقبوضہ جموں و کشمیر کی متنازع حیثیت کو ختم کرنے کا قانون منظور کرتے ہوئے کشمیر کو تین اکائیوں میں تقسیم کردیا تھا ۔بعدازاں رواں برس مئی میں ڈومیسائل کا متنازع قانون منظور کرلیاگیا تھا جس کے تحت غیر مقامی افراد کو کشمیر کے مستقل شہریت حاصل کرنے اور زمینیں خریدنے کا اختیار دیا گیا تھا ۔

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: