سٹامر کومقبوضہ کشمیر پر لیبر پارٹی کےموقف میں تبدیلی مہنگی پڑی

0
برطانوی لیبر پارٹی کے نئے قائد کیئر سٹارمر کو بھارتی لابی کے دباؤ پر مقبوضہ کشمیر کے حوالے سے پارٹی کا موقف تبدیل کرنے پر پارٹی کے سپورٹرز اور پارلیمانی پارٹی کے ارکان کی جانب سے بغاوت کا سامنا ہے۔
برطانوی کشمیری گروپوں نے سٹارمر کی بھارتی لابی گروپ سے ملاقات کےبعد مسئلہ کشمیرکو پاکستان اور بھارت کا دوطرفہ مسئلہ قرار دیئےجانےاور بھارتی آئین میں حالیہ تبدیلیوں کوبھارتی پارلیمنٹ کا مسئلہ قرار دینےپر شدید ردعمل کا اظہارکرتےہوئےاس کی مذمت کی ہے۔ بھارتی لابی گروپ سےملاقات کےبعد جاری کردہ ایک مشترکہ بیان میں کہا گیا تھا کہ ہم برصغیر کے مسائل کو یہاں کمیونٹیز کو تقسیم کرنے کیلئے استعمال نہیں ہونے دیں گے۔
سٹارمر نے لیبرفرینڈز آف انڈیا کے گروپ سے ملاقات کے بعد جاری کردہ مشترکہ اس بیان میں زور دے کر کہا تھا کہ بھارت کے زیر قبضہ کشمیر پاکستان اور بھارت کے درمیان ایک دوطرفہ مسئلہ ہے، جسے پرامن طور پر حل کیا جانا چاہئے اور بھارت کے آئین سے متعلق کوئی مسئلہ بھارتی پارلیمنٹ کا معاملہ ہے۔
لیبر پارٹی کے ارکان پارلیمنٹ سمیت پارلیمانی گروپ نے کیئر سٹارمر سے ان کے ریمارکس کی وضاحت طلب کرنے اور کشمیر میں بھارت کی ریاستی دہشت گردی کے حوالے سے غلط پالیسی بیان کو واپس لینے کیلئے دباؤ ڈالنے کیلئے ان سے فوری ملاقات کی درخواست کی ہے۔

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: