اے دنیا کے منصفو اور سلامتی کے ضامنو

پوری دنیا میں بسنے والے پاکستانی آج یوم یکجہتی کشمیر اس عہد کی تجدید کیساتھ منا رہے ہیں کہ آزادی کی جدوجہد میں ہمیشہ مظلوم کشمیریوں کے شانہ بشانہ کھڑے رہیں گے۔ کشمیری شہدا کو خراج عقیدت پیش کرنے کے لیے 10 بجے سائرن بجائے گئےاور اس کے بعد ایک منٹ کی خاموشی اختیار کی گئی۔ اس کے علاوہ کشمیری عوام سے اظہار یکجہتی کے لیے مرکزی تقریب پاکستان اور کشمیر کو ملانے والے کہالہ پل پر منعقد جس میں پاکستانی وزراء سمیت ہزاروں افراد نے شرکت کی۔
مقبوضہ کشمیرمیں بھارتی مظالم اورمظلوم کشمیریوں سےاظہار یکجہتی کیلئےپاکستان میں وفاقی و صوبائی حکومتوں کی جانب سے یوم یکجہتی کشمیر کے موقع پرعام تعطیل ہےجبکہ سرکاری سطح پر کشمیریوں سےاظہاریکجہتی سیمینارز کا اہتمام کیا جارہا ہے جبکہ مختلف سیاسی جماعتوں اور نجی تنظیموں کی جانب سے ریلیوں اور کانفرنسز منعقد کی جا رہی ہیں جن کا مقصد مقبوضہ وادی میں بھارتی فوج کے وحشیانہ مظالم، خواتین کی بے حرمتی، نوجوانوں کو لاپتہ کرکے مارے جانے جیسے افسوس ناک واقعات کو عالمی برادری کے سامنے اجاگر کرنا ہے۔
پاکستانی 1990ء سے 5 فروری کو اہل کشمیر کے ساتھ اظہار یکجہتی کےطورپرمنارہےہیں۔کشمیری مسلمان اپنی جدوجہدِ آزادی جاری رکھے ہوئے ہیں،اُن کی یہ جدوجہد پہلے ڈوگرہ راج کےخلاف اورپھربھارت کےخلاف پچھلےکئی عشروں سے چلی آ رہی ہے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.