مقبوضہ کشمیرمیں بدترین کرفیواورلاک ڈاؤن کا ساتواں مہینہ

0
مقبوضہ وادی کو دنیا کی سب سے بڑی جیل بنے آج سات ماہ ہو گئے ہیں،،مسلسل کرفیواورلاک ڈاؤن نے کشمیریوں کی زندگی اجیرن بنا رکھی ہے،، وادی میں پری پیڈ موبائل، ایس ایم ایس اورانٹرنیٹ سروسز تا حال معطل ہیں۔ جس کے باعث گھروں میں قید کشمیریوں کا دنیا سے رابطہ منقطع ہو کر رہ گیا ہے،، کاروباری ادارے بند ،سکول اور سرکاری دفاتر طلباءاور عملے سے خالی ہیں،ادھر خوراک اورادویات کی شدید قلت کے باعث کشمیری ایڑھیاں رگڑ رگڑ کر جان دینے پر مجبور ہو گئے۔دوسری جانب کشمیریوں کی نسل کشی کی غرض سے وادی میں خون کی ہولی کھیلی جا رہی ہے۔سرچ آپریشن کی آڑ میں نوجوانوں کو گرفتار کر کے تشدد کا نشانہ بنائے جانے کا سلسلہ جاری ہے۔ اب تک حریت رہنماؤں سمیت سینکڑوں کشمیریوں کو گرفتار کیا جا چکا ہے۔ بڑھتے ظلم وستم سےوادی کمشیریوں کی آہوں اور سسکیوں سے گونج رہی ہے۔5اگست کو مودی سرکار نے کشمیر کو خصوصی حیثیت دینے والے بھارتی آئین کے آرٹیکل 370 اے کو ختم کر کے مقبوضہ وادی میں کرفیو نافذ کیا تھا۔ جس کے بعد کشمیریوں پر ہونے والےانسانیت سوز مظالم پرعالمی سطح پر سخت تنقیدکےباوجودمودی سرکارکےکان پرجوں تک نہ رینگی،، توادھربھارتی مظالم پراقوام متحدہ کی خاموشی سوالیہ نشان بن چکی ہے۔

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: