جنت نظیر وادی کو جہنم بنے52واں روز

مقبوضہ کشمیرکی خصوصی حثیت کو ختم کرنے کے بعد52ویں روز بھی جبری پابندیاں اور کرفیونافذ،،، گجرات کے قصائی نے جنت نظیر وادی کے مکینوں کی زندگی جہنم بنادی ،،،موبائل فون، لینڈ لائن سمیت دیگر سہولیات بھی مکمل طور پر بند ہیں۔ دکانیں، تعلیمی ادارے بند ہیں، ہسپتال ویرانی کے مناظر پیش کر رہے ہیں،ٹرانسپورٹرز بھی اپنی گاڑیاں باہر نہیں نکال رہے۔ مودی سرکار نے جنت نظیر وادی کو عقوبت خانے میں تبدیل کردیا،،کشمیریوں کو نہ خوارک میسر ہے نہ ادویات،،،مقبوضہ وادی کے ہر گلی کوچے پر بھارتی فوجی تعینات ہیں جن کی قائم کردہ چیک پوسٹوں پر خطرناک اسلحہ موجود ہے،کوئی شہری انتہائی ضرورت کے تحت اپنے گھر سے نکلنے کی کوشش کرے تو پیلٹ گنز سے شدید زخمی کر دیا جاتا ہے،ظلم کی انتہا کہ ہسپتالوں میں ادویات تک ختم ہو چکی ہیں اور مریضوں کی حالت انتہائی خراب ہے، آپریشن کرنے کیلئے بھی ضروری سامان مہیا نہیں اس کے باوجود مودی حکومت ذرا سی لچک دینے کو تیار نہیں۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.