مقبوضہ کشمیر میں مسلسل کرفیو کا چوتھا مہینہ جاری

مودی سرکاری کی جانب سے آرٹیکل 370 اے ختم کرنے کے بعد مقبوضہ کشمیر میں مسلسل کرفیو کا چوتھا مہینہ جاری ہے۔ وادی میں انٹرنیٹ،موبائل سروس بند،ٹرانسپورٹ معطل،تعلیمی ادارے، کاروباری مراکز،دکانیں بھی بند پڑی ہیں۔ بھارتی فورسز نے گھر گھر تلاشی کے دوران متعدد کشمیری نوجوانوں کو گرفتار کرلیا۔ بھارت کے غاصبانہ قبضے، مسلسل کرفیو اور لاک ڈاؤن نے کشمیر جنت نظیر کا حسن گہنا دیا۔کشمیری نوجوان، بچے، بزرگ اورخواتین اپنے لہو سے آزادی کی جدوجہد آگے بڑھا رہے ہیں۔ 96 روز سے کشمیری گھروں میں محصور ہیں۔ تعلیمی ادارے بند، ٹرانسپورٹ معطل ہے۔ کاروباری مراکز کی مسلسل بندش نے کشمیریوں کے روزگار تباہ کردئیے۔ بھارتی فورسز گھر گھر تلاشی کے بہانے چادر اورچاردیواری کا تقدس بھی پامال کررہی ہیں۔ مختلف علاقوں کے محاصرے اور چھاپوں کے دوران متعدد کشمیری نوجوانوں کو گرفتار اور خواتین کی عصمت دری کی جارہی ہے۔تمام تر پابندیوں کے باوجود بھارت سرکار کشمیریوں کی جدوجہد آزادی کو دبانے میں ناکام رہی ہے۔ نہتے کشمیری اپنے حق خود ارادیت کے حسول کیلئے سڑکوں پر احتجاج کر رہے ہیں۔ احتجاجی مظاہرے کرنے والے کشمیریوں کے ساتھ قابض فوج کا سلوک درندوں سے بھی بدتر ہے۔ جھڑپوں میں ظالم درندہ صفت فوج کی طرف سے پیلٹ گنز کا بے دریغ استعمال کیا جاتا ہے جس سے درجنوں کشمیری زخمی ہو گئے۔ آزادی کیلئے آواز اٹھانے پربھارتی سیکیورٹی فورسز نے سیکڑوں کشمیریوں کو گرفتار کر لیا۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.