کراچی میں گندگی اور کچرا بحران کی شکل اختیار کرگیا

بارش ہوئے کئی روز ہوگئےلیکن پانی جوں کا توں کھڑا علاقہ مکینوں کو چِڑا رہا ہے جبکہ عید کو گزرے بھی ہفتہ بیت چکا لیکن کیا مجال کہ کسی محکمے نےاپنی ذمہ داری جانتے ہوئےجانوروں کی آلائشیں اٹھانے کی تکلیف کی ہو،،،تعفن ایسا کہ سانس لینا بھی ہوگیا مشکل ،،،مکھیوں اورمچھروں کی تو جیسے سُنی گئی ہو،،،نہ انہیں کسی ادارےکا ڈر اور نہ ہی کوئی خوف،،،بے دھڑک شہریوں میں بیماریاں پھیلانے لگے۔یہ کسی گاؤں یا دور دراز علاقے کا احوال نہیں بلکہ یہ تو حال ہے پاکستان کے سب سے بڑے شہر کراچی کا۔اس شہر کا جہاں بانی پاکستان کی آخری آرامگاہ ہے،،،ایسا شہر جسے ملک کا کاروباری حب کہا جاتا ہےلیکن اس شہربے مثال کا کوئی پرسان حال نہیں ۔ سندھ حکومت اور وفاق شہریوں کے مسائل حل کرنے کے بجائے ایک دوسرے پر الزامات لگا کر اپنی ذمہ داریاں نبھا رہےہیں۔
ایک جانب سندھ حکومت وفاق پر فنڈز نہ دینے اور نامعلوم افراد پر سیوریج لائنیں بند کرنے کا الزام لگا رہی ہیں تو دوسری جانب میئر کراچی اور پی ٹی آئی شہر کی تمام تر صورتحال کا ذمے دار سندھ حکومت کو قرار دے رہی ہے۔ یوں محسوس ہوتا ہے کہ جیسے دونوں کو اپنی سیاست چمکانے کا موقع ہاتھ آگیا ہے ۔موجودہ صورتحال میں دونوں جانب سے سیاسی بیانات اور الزامات پر کراچی کے شہری پوچھ رہے ہیں کہ ایک دوسرے پر گند اُچھالنے والے شہر کا گند کب صاف کریں گے؟

شاید آپ یہ بھی پسند کریں
1 تبصرہ
  1. Amber Shahzadi کہتے ہیں

    clean the Karachi

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.