پھربارش،پھرشہرپانی پائی،پھربجلی بند،پھرہلاکتوں کا خدشہ

گزشتہ دنوں شہرقائد میں ہونے والی بارشوں سے متعدد علاقوں میں چوبیس سے چھتیس گھنٹے بجلی بند رہی جس سے لوگوں کی زندگی عذاب بن گئی جبکہ کرنٹ لگنے سے متعدد شہری جان سے گئے لیکن کے اس کے باوجود صوبائی شہری انتظامیہ ، بلدیاتی اداروں کی جانب سےغیر معمولی انتظامات دیکھنے میں نہیں آئے ہیںدوسری جانب نکاسی آب کےلیے بھی کچھ خاص سرگرمیاں دکھائی نہیں دے رہیں اورعیدالاضحی پرآبادیوں میں پانی جمع ہونے کی صورت میں جانوروں کی آلائشیں اٹھانےمیں مشکلات کا اندیشہ ہے کیونکہ آئشوں سے ناصرف شہر میں تعفن پھیلے گا بلکہ اس سےبیماریاں پھیلنے کا ابھی خدشہ ہے ۔ادھر کے الیکٹرک کا سارا زور صارفین کو احتیاطی تدابیر اختیار کرنے پر ہے لیکن زیادہ ترہلاکتیں پول میں کرنٹ آنے اور تاریں ٹوٹنے سے ہوتی ہیں ۔ ادارے نے اپنے اعلامیے میں کہا کہ مون سون کے حوالے سے شہری انتظامیہ کے علاوہ صوبائی اور وفاقی حکومتی اداروں کے ساتھ مشترکہ حفاظتی اقدامات کا آغاز کر دیا ہے تاکہ بجلی کی مسلسل اور محفوظ فراہمی کو ممکن بنایا جاسکے ۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں
1 تبصرہ
  1. Amber Shahzadi کہتے ہیں

    Govt should notice it

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.