کراچی پولیس کولگام کون ڈالے گا؟؟؟

گزشتہ روز فائرنگ سے جاں بحق ہونے والے شیر خوار احسن کا پوسٹ مارٹم جناح ہسپتال میں کیا گیا،بچے کو دائیں جانب سے سینے میں گولی لگی جو بائیں جانب کمر سے پار ہوگئی۔
واقعے کا مقدمہ بچے کے والد کی مدعیت میں درج ہوالیکن پولیس اپنے پیٹی بھائیوں کوبچانے میں مصروف ہوگئی،معصوم بچے کاباپ دہائی دیتارہا کہ ہمیں نہیں معلوم ایف آئی آر میں کیا لکھاہے،واقعے کا مقدمہ مرضی کے مطابق درج نہیں کیا گیا۔
ایڈیشنل آئی جی کراچی امیر شیخ کا کہنا ہے کہ ملزم امجد کے دیگر ساتھی صمد، خالد اور پیارو بھی گرفتار ہیں جن کے پاس موجود اسلحہ بھی قبضے میں لے لیا گیا ہے اور چاروں اہلکاروں کا عدالت سے ریمانڈ لیا جائےگا۔
ایس ایچ او سچل جاوید ابڑو کا مبینہ پولیس مقابلےسے متعلق کہنا تھا کہ اہلکاروں کو شہری نے اطلاع دی کی آگے ڈاکو جا رہے ہیں جس کا انہوں نے تعاقب کیا، واقعے کی جگہ سے پولیس کو گولی کا صرف ایک خول ملا ہے جسے فرانزک ٹیسٹ کے لیے بھیج دیا گیا ہے۔
پولیس کے مطابق اہلکاروں کے ڈیوٹی ختم کرکے جانے کے بعد معلوم ہوا کہ واقعے میں بچہ ہلاک ہوا تاہم بچے کو کس کی گولی لگی ابھی کچھ نہیں کہا جاسکتا، فرانزک رپورٹ آنے پر صورتحال واضح ہوگی۔دوسری جانب وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے بھی واقعے کا نوٹس لے لیا ہےاور واقعے کی رپورٹ طلب کررکھی ہے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.