پاکستان کا ذمہ دار ریاست ہونے کا ثبوت

پاکستانی دفتر خارجہ سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ عالمی عدالت انصاف کے فیصلے کے مطابق بھارتی جاسوس کلبھوشن یادیو کو ویانا کنونشن کے آرٹیکل 36 کے پیراگراف ‘ون بی’ کے تحت حاصل حقوق سے متعلق آگاہ کردیا گیا ہے،بیان کے مطابق بطور ذمہ دار ریاست، پاکستان کلبھوشن کو ملکی قوانین کے تحت قونصلر تک رسائی دے گا جس کے لیے طریقہ کار وضع کیا جارہا ہے۔عالمی عدالت انصاف نے بھارتی جاسوس کلبھوشن یادیو کیس کا فیصلے سناتے ہوئے بریت کی بھارتی درخواست مسترد کردی تھی۔ جج عبدالقوی احمد یوسف نے بھارتی درخواست مسترد کرتے ہوئے مؤقف اپنایا کہ پاکستان کی جانب سے کلبھوشن کو سنائی جانے والی سزا کو ویانا کنونشن کے آرٹیکل 36 کی خلاف ورزی تصور نہیں کیا جاسکتا۔عالمی عدالت نے کلبھوشن یادیو کی سزائے موت کا پاکستانی فوجی عدالت کا فیصلہ منسوخ کرنے اور حوالگی کی بھارتی استدعا بھی مسترد کردی جبکہ حسین مبارک پٹیل کے نام سے کلبھوشن کے دوسرے پاسپورٹ کو بھی اصلی قرار دیاتاہم عدالت کا کہنا تھا کہ ویانا کنونشن جاسوسی کرنے والے قیدیوں کو قونصلر رسائی سے محروم نہیں کرتا لہٰذا پاکستان کلبھوشن کو قونصلر رسائی دے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.