امارات اور بحرین سے معاہدے کے بعد اسرائیل کی غزہ پر بمباری

0
خیبرایجنسی کی رپورٹ کے مطابق اسرائیلی وزیراعظم نے الزم عائد کیا کہ غزہ سے راکٹ حملے ہوئے کیونکہ وہ چاہتے ہیں کہ 1994 کے بعد اسرائیل کے عرب ممالک سے ہونے والے معاہدے روک دیے جائیں۔دوسری جانب غزہ کی حکمران جماعت حماس نے خبردار کرتے ہوئے کہا کہ اگر بمباری جاری رہی تو کشیدگی بڑھے گی۔اسرائیل کی فوج نے اپنے بیان میں کہا کہ غزہ کی پٹی سے تقریبآ 15 راکٹ فائر کیے گئے، جن میں سے 9 راکٹوں کو ناکارہ کردیا گیا۔انہوں نے کہا کہ جنوبی ساحلی شہر اشدود میں راکٹوں سے دو افراد زخمی ہوئے۔اسرائیلی فوج نے کہا کہ لڑاکا طیاروں نے حماس کے عسکری مقامات کو نشانہ بنایا۔حماس کی جانب سے راکٹ فائر کرنے کے الزامات سے متعلق کوئی ردعمل نہیں آیا اور نہ ہی زمہ داری قبول کی گئی۔اسرائیل نے حماس کو ذمہ دار ٹھہرایا اور ایسے اقدامات پر سخت کارروائی کی دھمکی دی۔
اسرائیل نے گزشتہ روز وائٹ ہاؤس میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی موجودگی میں متحدہ عرب امارات اور بحرین کے وزرائے خارجہ کے ساتھ معاہدے پر دستخط کردئیے تھے۔معاہدے کے بعد فلسطین بھر میں احتجاج کیا گیا تھا اور ریلیاں بھی نکالی گئی تھیں۔

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: