فوجی عدالتیں:چودھری اسلم،امجد صابری اور سبین محمود کے قاتل انجام کو پہنچ

آئی ایس پی آر کے مطابق فوجی عدالتوں میں دہشت گردی کے مقدمات پر تیزی سے کارروائی ہوئی۔ ملٹری کورٹس کے 2015 میں قیام سے لے کر اب تک 717 مقدمات میں سے 546 کے فیصلے ہوئے جن میں 310 دہشتگردوں کی پھانسی کا حکم دیا گیا۔ 234 دہشت گردوں کو پانچ سال سے لے کر عمرقید تک کی سزا ، دو ملزمان عدم ثبوت پر بری کر دیا گیا۔

آئی ایس پی آر کے مطابق فوجی عدالتوں سے سزائے موت پانے والے 310 دہشت گردوں میں سے 56 کو پھانسی چڑھا دیا گیا ، 254 سفاک مجرموں کی اپیلیں مختلف عدالتوں میں زیرسماعت ہیں۔ فوجی عدالتوں سے سزائے موت پانے والوں میں اے پی ایس پشاور پر حملہ میں ملوث 5 دہشت گرد شامل ہیں۔ میریٹ ہوٹل اسلام آباد، پریڈ لین راولپنڈی، آئی ایس آئی ملتان آفس اور فوجی کمانڈوز پر حملوں کے دہشتگرد بھی انجام کو پہنچ چکے۔

ملٹری کورٹس نے آئی ایس آئی سکھر آفس، بنوں جیل، مستونگ حملے، نانگا پربت پر غیرملکیوں کو مارنے والوں کو عبرت ناک سزائیں سنائیں۔ ایس ایس پی چودھری محمد اسلم اور امجد صابری کے قاتل، چلاس میں شہریوں اور سیکورٹی جوانوں پر حملے کےمجرم بھی سزائےموت پانےوالوں میں شامل ہیں۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.