ایران کا سلامتی کونسل کے منشور میں تبدیلی کا مطالبہ

امریکا نے جواد ظریف کو نیویارک میں اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے اجلاس میں شرکت کے لیے ویزا جاری نہیں کیا۔ ردعمل میں تہران کے مندوب ماجد تختے رانچی نے اقوام متحدہ میں امریکی اقدام کو عالمی معاہدے کے منافی قراردیتے ہوئے ایرانی وزیر خارجہ کا خط پڑھ کر سنایا جس میں اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے منشور میں تبدیلی کا مطالبہ کیا گیا ہے۔جواد ظریف کا کہنا ہے کہ سلامتی کونسل کسی بھی ملک کے اندرونی اور بیرونی معاملات میں مداخلت اور دھمکی یا طاقت کے استعمال کی ممانعت کرے۔غیر قانونی پابندیوں سمیت یکطرفہ اقدامات مسترد کیےجائیں ۔اس کے ساتھ ہی عالمی برادری متاثرہ اور ترقی پذیر ممالک کے نقصانات کی تلافی کے لیے مالی ذمہ داری قبول کرے۔ایرانی وزیر خارجہ کا کہنا ہے کہ امریکی ڈرون حملے کے بعد سے نہ صرف ایرانی لوگوں کے لیے خطرات اور ان پر حملے کے خدشات بڑھ گئے ہیں۔ بلکہ امریکا کی معاشی دہشت گردی سے عام ایرانیوں کو کھانے پینے کی اشیا اور ادویات تک رسائی میسر نہیں ہے۔
شاید آپ یہ بھی پسند کریں

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.