ٹرمپ کے مشیر جان بولٹن کا استعفیٰ بھی کام نہ آیا

ایران کی سرکاری خبررساں ایجنسی کے مطابق اقوام متحدہ میں ایرانی سفیر ماجد تخت نے کہا کہ ایران پرعائد پابندیوں کے برقرار رہنے کی صورت میں تو امریکا سے مذاکرات کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا۔ صدر ٹرمپ کی انتظامیہ سے قومی سلامتی کے مشیر جان بولٹن کی رخصتی کے بعد ایران امریکا سے مذاکرات کی بحالی پر نظرثانی نہیں کرے گا۔
انہوں نے مزید کہا کہ امریکی قومی سلامتی کے مشیر جان بولٹن ایران کی پالیسی کے شدید خلاف تھے، انہوں نے کئی بار اپنے بیانات میں تہران حکومت کو شدید تنقید کا نشانہ بھی بنایا۔تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ امریکا کے اس فیصلے کے بعد ایران سے مذاکرات کی کوئی راہ نکلے گی تاہم ایران نے واشنگٹن حکام سے بات چیت کرنے سے انکار کردیا۔ یاد رہے کہ استعفے سے قبل جان بولٹن نے ایک بیان میں ایران کو خبردار کیا تھا کہ وہ امریکا کی جانب سے تحمل اور تدبر کے مظاہرے کو اس کی کمزوری سمجھنے کی غلطی نہ کرے

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.